چاند پر موجود چندریان 3 کی زندگی جلد ختم ہونیوالی ہے

چندریان نے 23 اگست کو چاند کے جنوبی قطب پر لینڈنگ کرکے تاریخ رقم کی تھی مگر اس بھارتی خلائی مشن کی زندگی صرف چند دن کی مہمان ہے۔
غیر ملکی میڈیا کے مطابق بھارتی خلائی تحقیقاتی ادارے (اسرو) کے چندریان 3 مشن کو چاند کے قطب جنوبی میں ایک ہفتے سے زائد وقت ہو چکا ہے جہاں روور پرگیان مختلف ڈیٹا اکٹھا کر رہا ہے اور یہ سلسلہ لینڈنگ سے 14 دن تک جاری رہے گا جس کے بعد وہاں طویل رات شروع ہو جائے گی۔
7 ستمبر کو جب چاند پر رات کا آغاز ہوگیا تو پرگیان روور اور وکرن لینڈر سورج کی روشنی سے محروم ہو جائیں گے جو کہ سولر پاور سے کام کرتے ہیں اس طرح ان کے لیے مزید کام کرنا ناممکن ہوگا جب کہ رات کے دوران چاند کا درجہ حرارت منفی 133 ڈگری سینٹی گریڈ تک گر جاتا ہے جس کی وجہ سے بھی روور کا آپریشن متاثر ہوگا یوں یہ تبدیلی چندریان 3 کا مشن ختم کر دے گی۔
رپورٹ کے مطابق لینڈر اور روور کو 14 دن کے لیے ہی ڈیزائن کیا گیا تھا اور اسرو کی جانب سے بھی 7 ستمبر تک مشن کے اختتام کی تیاری کی جا رہی ہے۔
واضح رہے کہ چاند کی ایک رات زمین کے 14 دن کے برابر ہوتی ہے اور اس حوالے سے اسرو کے سائنسدانوں نے اس خیال کو مسترد نہیں کیا کہ چاند پر دن کا آغاز ہونے پر یہ دونوں پھر متحرک ہو جائیں۔ اگر ایسا ہوا تو یہ چندریان 3 مشن کے لیے ایک بونس زندگی ہوگی۔
چندریان 3 نے چاند پر کیا ڈھونڈ لیا؟
غیر ملکی میڈیا کے بھارتی خلائی تحقیقی تنظیم اسرو کے حوالے سے رپورٹ کیا ہے کہ چندریان 3 کے وکرم لینڈر نے چاند کے جنوبی قطبی علاقے میں پلازمہ کا پتہ لگایا ہے جو نسبتاً کم گھنا ہے۔
اسرو کے مطابق چندریان 3 لینڈر پر نصب ریڈیو اناٹومی آف مون باونڈ ہائیپر سینسٹیو لونو سیفیئر اینڈ ایٹموسفیئر، لینگموئیر پروب (رمبھا-ایل پی) پے لوڈ نے جنوبی قطبی خطے کی سطح کے قریب قمری پلازما ماحول کی پہلی پیمائش کی ہے اور ابتدائی جائزوں سے پتہ چلتا ہے کہ چاند کی سطح کے قریب پلازما نسبتاً کم گھنا ہے۔
وکرم لینڈر پر نصب رمبھا-ایل پی جو ریڈیو ویو کمیونیکیشن میں لونر پلازما کی وجہ سے ہونے والی آواز کو کم کرنے میں مدد کرتا ہے نے پلازما کے ماحول کا نقشہ بھی بنایا ہے اور وہ پے لوڈ چاند کے پلازما ماحول میں الیکٹران کی کثافت، درجہ حرارت اور برقی میدان کی پیمائش کرے گا۔

Views= (449)

Join on Whatsapp 1 2

تازہ ترین