پیٹرول کی بڑھتی قیمتوں سے پریشان سائیکل لینے کی سوچنے والے ذرا قیمتیں جان لیں

پٹرول کی قیمتوں میں ہوشربا اضافے نے جہاں عام شہری کا سفر کرنا مشکل بنا دیا ہے، وہیں بڑھتی مہنگائی میں غریب کی سواری سائیکل بھی پہنچ سے باہر ہوگئی ہے۔
پہلے کہا جاتا تھا کہ سائیکل چلائیں صحت مند رہیں اور پٹرول بچائیں، مگر کیسے؟ کیونکہ اب سائیکل خریدنا بھی تقریباً ناممکن ہو گیا ہے اور اب بس پیدل چلنے کا آپشن ہی بچا ہے۔
مارکیٹ میں 12 انچ کی سائیکل جو پانچ سے چھ ہزار میں ملتی تھی اب پندرہ سے اٹھارہ ہزار میں فروخت ہو رہی ہے، جبکہ 24 انچ کی سائیکل کی قیمت 40 سے 48 ہزار تک پہنچ چکی ہے۔
پھر بھی اگر آپ کی جیب اجازت دیتی ہے اور آپ سائیکل خریدنا چاہتے ہیں تو مختلف برانڈز کی قیمتیں ذیل میں درج ہیں۔
ویب سائٹ ”واٹ از پرائز“ کے مطابق سہراب ایک پاکستانی برانڈ ہے جو اپنی اعلیٰ معیار اور پائیدار سائیکلوں کے لیے ہمیشہ ہی معروف رہا ہے۔
پاکستان میں سہراب سائیکلوں کی قیمت ماڈل، فیچرز اور ریٹیلر کے لحاظ سے مختلف ہو سکتی ہے۔ تاہم، یہاں سہراب سائیکل کے ماڈلز اور پاکستان میں ان کی تخمینی قیمتیں دی گئی ہیں۔
سہراب سپرنٹر: تقریباً 15,000 روپے سے شروع
سہراب کلاسک: تقریباً 20,000 روپے سے شروع
سہراب روڈ ماسٹر: تقریباً 25,000 روپے سے شروع
سہراب روڈ کنگ: تقریباً 30,000 روپے سے شروع
سہراب MTB: تقریباً 35,000 روپے سے شروع
سہراب MBX سائیکل: 23,750 روپے
سہراب ایکسر سائز اینڈ فٹنس سائیکل 11,800 روپے
ماؤنٹین سائیکل 26 انچ 14,999 روپے
پاکستان میں سائیکلوں کی قیمت برانڈ، ماڈل اور خصوصیات کے لحاظ سے مختلف ہو سکتی ہے۔ یہاں سائیکلوں کی مختلف اقسام اور پاکستان میں ان کی تخمینی قیمتیں درج ہیں۔
سپر فائن سائیکل 16,499
اوموئیک باربی سائیکل: 13,999
T106 فیٹ ٹائر سائیکل ٹرنکس: 90,000
27.5 انچ سائیکل M116 ایلیٹ ٹرنکس: 64,500
فلاور باسکٹ والی دھاتی سائیکل: 10,500
اس کے علاوہ ہیرو، پاکستان، اٹلس اور راوی کی بھی سائیکلیں پاکستان میں دستیاب ہیں جن کی قیمتیں سہراب سے ہی ملتی جلتی ہیں۔
واضح رہے کہ یہ تخمینی قیمتیں ہیں اور اصل قیمت مخصوص ماڈل اور خصوصیات کے لحاظ سے مختلف ہو سکتی ہے۔ یہ بات بھی قابل توجہ ہے کہ جگہ اور خوردہ فروش کے لحاظ سے قیمتوں میں اتار چڑھاؤ آسکتا ہے۔

Views= (506)

Join on Whatsapp 1 2

تازہ ترین