’اشتہارات کی کمائی میں حصہ‘، ٹوئٹر کی ویڈیوز بنانے والوں کو نئی پیشکش

سماجی رابطوں کی ویب سائٹ ٹوئٹر نے کہا ہے کہ ویڈیوز بنانے والوں کو اشتہارات سے ہونے والی کمائی میں حصہ دیا جائے گا۔ جمعے کو کی گئی ٹویٹ میں کمپنی نے اعلان کیا کہ ویڈیوز بنانے والوں کو اُن اشتہارات کی کمائی میں حصہ ملے گا جو پوسٹ کے ریپلائز میں ظاہر ہو رہے ہوتے ہیں۔
تاہم صرف تصدیق شدہ اکاؤنٹس اس کے اہل ہوں گے اور جن کی پوسٹس گزشتہ تین ماہ میں 50 لاکھ مرتبہ دیکھی جا چکی ہوں۔
ٹوئٹر کا کہنا ہے کہ ادائیگی کے لیے صارف کا سٹرائپ پر اکاؤنٹ ہونا لازمی ہے۔
کمپنی کی کوشش ہے کہ زیادہ سے زیادہ ویڈیوز بنانے والوں کو پلیٹ فارم کی جانب راغب کیا جائے۔
سوشل میڈیا کمپنی نے اپنی پوسٹ میں کہا کہ صارفین کو ٹوئٹر سے براہ راست کمانے میں مدد فراہم کرتے ہوئے ’کریٹر ایڈز ریوینیو شیئرنگ‘ کے نام سے پروگرام لانچ کر دیا ہے۔
ٹوئٹر نے کہا کہ رواں ماہ میں ہی اس پروگرام کو مزید آگے بڑھایا جائے گا اور تمام اہل صارفین اس کے لیے اپلائی کر سکیں گے۔
رواں سال کے آغاز میں بھی ٹوئٹر نے صارفین کو اجازت دی تھی کہ وہ اپنے شائع کیے گئے ویڈیوز مواد کو سبسکرائب کروا کر پیسے کما سکتے ہیں۔
ٹوئٹر کے مالک ایلون مسک نے کہا تھا کہ سبسکرپشن فیس سے ہونے والی کمائی کا پورا حصہ پہلے سال میں ویڈیوز بنانے والوں کو ملے گا۔
خیال رہے کہ کمپنی کی آمدنی بڑھانے کے لیے چند ماہ قبل ٹوئٹر نے سیاسی اشتہارات کی اشاعت پر عائد پابندی ختم کرنے کا اعلان کیا تھا۔
ٹوئٹر نے کہا تھا کہ پلیٹ فارم پر ایسے اشتہارات شائع ہوں گے جو اہم موضوعات پر عوامی مباحثے کے لیے اہم ہوں۔

مارک زکر برگ کی کمپنی میٹا کی جانب سے تھریڈز کی ایپ متعارف کروانے کے بعد سے ٹوئٹر کو سخت مقابلے کا سامنا ہے۔
میٹا کے مطابق تھریڈز پچھلے تمام ریکارڈ توڑتے ہوئے سب سے کم عرصے میں سب سے زیادہ صارفین حاصل کرنے والی ایپ بن گئی ہے۔
کمپنی نے کہا تھا کہ تھریڈز کی لانچ کے پانچ دنوں میں دس کروڑ سبسکرائبرز ہو چکے ہیں۔

Views= (422)

Join on Whatsapp 1 2

تازہ ترین