کیا غمگین گانے سننا مفید ہو سکتا ہے؟

اس میں کوئی شک و شبہ نہیں کہ کوئی بھی ایسا شخص نہیں ہو گا جو اداس و غمگین رہنا پسند کرتا ہو۔ اس کے باوجود ہم کیوں غمگین گانے یعنی ’سیڈ سانگز‘ سننا پسند کرتے ہیں جبکہ خوشی بکھیرنے والے بے شمار گیت موجود ہیں۔
اس حوالے سے ایک نئی تحقیق میں کہا گیا ہے کہ اس بات کا تعلق غمگین گانے سننے سے نہیں ہے بلکہ بہت سی دیگر وجوہات ہیں جن میں سے زیادہ تر کا تعلق مثبت احساسات کو اجاگر کرنا ہے یعنی ایسا کرنا ذہنی صحت کے لیے کافی فائدہ مند ہو سکتا ہے۔
ییل یونیورسٹی کے شعبہ فلسفہ میں ماہر نفسیات پروفیسر ڈاکٹرجوشوا نوپ کی جانب سے کیے گئے ایک تجربے میں یہ بات سامنے آئی ہے کہ ’ہم اس لیے اداس گانوں کا انتخاب کرتے ہیں کہ وہ ہمیں جوڑ کر رکھنے میں اہم ہوتے ہیں اور الگ تھلگ نہیں کرتے۔‘
تجرباتی نتائج میں یہ بھی دیکھنے میں آیا کہ موسیقی کے سامعین کے احساسات مختلف ہو جاتے ہیں۔ وہ مختلف قسم کی موسیقی سنتے ہیں جن میں خوشی، محبت، اداسی اورغمی کے احساسات ہوتے ہیں۔
ڈیلی ٹیلی گراف کے مطابق ڈاکٹر نوپ نے اس بارے میں مزید وضاحت کی کہ ’آپ خود کو تنہا محسوس کرتے ہیں تو اس صورت میں مختلف نوعیت کی موسیقی سنیں۔‘
خوشی کا احساس
گزشتہ تحقیق میں یہ بات سامنے آئی تھی کہ جو لوگ غمگین گانے سنتے ہیں وہ اپنے دکھوں میں اضافہ کرنے کے لیے ایسا نہیں کرتے۔ امریکن سائیکولوجیکل ایسوسی ایشن کی جانب سے شائع ہونے والی ایک رپورٹ کے مطابق ’اداس گانے انہیں زیادہ خوش ہونے میں معاون ثابت ہوتے ہیں۔‘
دریں اثنا ماہرین نفسیات کا کہنا ہے کہ لوگ اداس گانوں کو اس لیے ترجیح دیتے ہیں کہ وہ ان کے گمشدہ احساسات کے قریب ہوتے ہیں یعنی ہو سکتا ہے ان کے اندر کی آواز ہوں، جبکہ ایم این سی کمپنی کے ماہر گریش چندرن کا کہنا ہے کہ ’غمگین گانے اس لیے سنتے ہیں کہ انہیں سکون دیتے ہیں۔‘
اس حوالے سے ہی ایک اور متوازی تحقیق میں یہ بات سامنے آئی ہے کہ رویے یا موڈ کے لیے اداس گانے ہماری ترجیح کیوں ہوتے ہیں۔ دراصل غمگین گانے ہمیں جذباتی طور پر سہارا دیتے ہیں بلکہ ایسا کہا جائے تو بے جا نہ ہو گا کہ اداس گانوں کے بول ہمارے گمشدہ ماضی کو سامنے لانے میں کسی حد تک اہم کردار ادا کرتے ہیں۔
موڈ بڑھانے والا
غمگین گانے ہمارے اندرونی احساسات کو مہمیز دینے کے لیے بہترین ثابت ہوتے ہیں بلکہ ایک طرح سے یہ گانے ہمارے لیے عام طور پر مثبت کام کرتے ہیں۔
ماہرین کے مطابق رونا انسانی رویے کے لیے ایک بہترعمل کا درجہ رکھتا ہے۔ اسی طرح دکھی موسیقی ہمارے جذبات کے بہاؤ کے لیے ایک اچھی راہ گزر ثابت ہو سکتی ہے۔

Views= (359)

Join on Whatsapp 1 2

تازہ ترین