انتہا پسند ہندوؤں کا مسجد میں گھس کر امام پرتشدد؛ داڑھی مونڈھ دی

بھارتی ریاست مہاراشٹر میں انتہا پسند ہندوؤں نے ایک مسجد کے اندر امام کو تشدد کا نشانہ بنا دیا، اور ان کی داڑھی مونڈھ دی۔
بھارت میں مسلمانوں کا جینا مشکل ہو گیا ہے، ماہ رمضان میں بھی ہندو انتہا پسندوں کی غنڈہ گردی جاری ہے، بھارتی میڈیا رپورٹس کے مطابق ریاست مہاراشٹر میں ہندو انتہا پسندوں نے مسجد کے امام کو ہندو نعرہ نہ لگانے پر تشدد کا نشانہ بنایا اور داڑھی مونڈھ دی۔
یہ واقعہ مہاراشٹر کے شہر جالنہ میں انوا گاؤں میں پیش آیا، جس میں ایک 26 سالہ امام ذاکر سید خواجہ کو مسجد کے احاطے میں تین نامعلوم افراد نے مبینہ طور پر مارا پیٹا اور ان کی داڑھی مونڈھ دی۔
امام نے بتایا کہ وہ اتوار کی شام کو مسجد میں اکیلے تھے اور قرآن مجید کی تلاوت کر رہے تھے کہ اچانک تین نقاب پوشوں نے دھاوا بول دیا، انھوں نے جے شری رام کا نعرہ لگانے پر مجبور کیا اور انکار پر پٹائی کی۔
بعد ازاں تشدد سے زخمی ہونے والے امام مسجد کو اسپتال منتقل کر دیا گیا، اور پولیس نے روایتی کارروائی کرتے ہوئے مقدمہ درج کر لیا۔ ایف آئی آر کے مطابق ہندو حملہ آوروں نے امام مسجد کو ناک سے کپڑا لگا کر بے ہوش کیا اور پھر فرار ہو گئے۔

Views= (722)

Join on Whatsapp 1 2

تازہ ترین