خاتون کرکٹر سے سابق شوہر سمیت 4 افراد کی اجتماعی زیادتی

بورے والا میں سابق شوہر نے خاتون کرکٹر کو دوستوں کے ساتھ مل کر مبینہ زیادتی کا نشانہ بناڈالا۔
متاثرہ کے ویڈیو پیغام کے مطابق کوچ نے لڑکی کو جو فاسٹ بولر تھی ،کالج کی کرکٹ ٹیم میں شامل ہونے کا مشورہ دیا اور پانچ سال قبل اس سے نوکری کا وعدہ بھی کیا۔
متاثرہ لڑکی نے یہ بھی دعویٰ کیا کہ کوچ نے اسے ویک اینڈ پر اپنے گھر بلانا شروع کیا اور تین سال قبل اس نے اپنے دوستوں کے ساتھ مل کر اسے نشہ پلایا اور اس کی عصمت دری کی۔ لڑکی کے تحریری بیان کے مطابق کوچ اور اس کے دوستوں نے اسے فلمایا اور پھر اسے بلیک میل کرتے رہے جبکہ اس کی ویڈیوز بھی سوشل میڈیا پر پوسٹ کیں ۔
لڑکی کے سابق شوہر جو کہ پی سی بی کے کوچ بھی ہیں انھوں نے زیادتی کے الزامات کی ترید کردی، الزام لگایا کہ خاتون کھلاڑی اور ان کا خاندان بلیک میلر ہے، خاتون 6 ماہ قبل بلیک میل کرکے زبردستی نکاح پر مجبور کیا پھر خاندانی جائیداد میں حصہ مانگنا شروع کردیا۔ خاتون کو نکاح کے دو ماہ بعد ہی طلاق دے دی تھی۔
متاثرہ لڑکی نے دعویٰ کیا کہ اسے اغوا کیا گیا اور تشدد کا نشانہ بنانے کے بعد اجتماعی عصمت دری کی گئی۔ اسی دوران کوچ نے فرضی نکاح نامہ لیا اور اسے اپنی بیوی کے طور پر متعارف کروانا شروع کر دیا۔ متاثرہ لڑکی کی شکایت موصول ہونے کے بعد کرکٹ بورڈ کے ڈائریکٹر ندیم خان نے واقعے کی مکمل تحقیقات کا حکم دیا جب کہ کوچ اس وقت ضمانت پر رہا ہے اور مرکزی ملزم پولیس کی حراست میں ہے
پاکستان کرکٹ بورڈ کا کہنا تھا کہ کوچ ملتان رینجر پر الزامات کی تحقیقات کے لئے کمیٹی بنادی گئی، کیس میں نامزد 9 افراد نے 21 جون تک عبوری ضمانت کروالی، گرفتار ملزم کو بھی ضمانت بعد از گرفتاری مل گئی۔

Views= (1739)

گروپ جائن کرنے کے لیے کلک کریں (NewsHook) /#/ (NewsHook-2)

اہم خبریں/ تازہ ترین