حکومت کا پیٹرول، ڈیزل کی قیمت میں 30 روپے فی لیٹر اضافے کا اعلان

عمران خان کی حکومت معاشی بارودی سرنگیں بچھا کرگئی ہے

حکومت نے پیٹرولیم منصوعات کی قیمتوں میں 30 روپے فی لیٹر اضافےکا اعلان کردیا۔
اسلام آباد میں پریس کانفرنس کرتے ہوئے وفاقی وزیر خزانہ مفتاح اسماعیل نےکہا کہ پہلے دن سے کہہ رہا ہوں کہ پیٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں اضافہ ناگزیر ہے، حکومت نے پیٹرول، ڈیزل اور کیروسین آئل کی فی لیٹر قیمت میں 30 روپے اضافےکا فیصلہ کیا ہے، پیٹرولیم مصنوعات کی نئی قیمتوں کا اعلان آج رات 12 بجے سے ہوگا۔
پیٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں اضافے کے بعد پیٹرول کی نئی قیمت 179 روپے، 86 پیسے جبکہ ڈیزل کی نئی قیمت 174 روپے 15 پیسے ہوجائے گی۔
قیمتوں میں اضافے کے بعد مٹی کے تیل کی نئی قیمت 155 روپے 56 پیسے فی لیٹر اور لائٹ ڈیزل کی نئی قیمت 148 روپے 31 پیسے فی لیٹر ہوجائے گی۔
مفتاح اسماعیل نے کہا کہ قیمتوں میں اضافے کے باوجود حکومت اب بھی ڈیزل پر فی لیٹر پر 56 روپے سبسڈی دے رہی ہے۔ ’عمران خان کی حکومت معاشی بارودی سرنگیں بچھا کرگئی ہے۔‘
مفتاح اسماعیل نے بتایا کہ آئی ایم ایف سے بات چیت مثبت انداز میں آگے بڑھ رہی ہے اوت پیٹرولیم مصنوعات کی قیمتیں بڑھائے بغیر اس کا قرض نہیں مل سکتا۔
ان کے مطابق پیٹرول کی قیمت نہ بڑھاتے تو روپیہ مسلسل گر رہا تھا اور مزید گر جاتا۔ ’سابق حکومت کی معاشی پالیسیوں کے باعث آج ملک کو مہنگائی کا سامنا ہے۔‘
مفتاح اسماعیل نے کہا کہ ’یہ ریاست کے لیے صحیح فیصلہ ہے۔ اس سے سیاسی نقصان ہوتا ہے تو ہوجائے۔‘
ایک سوال کے جواب میں ان کا کہنا تھا کہ یہ بات درست ہے کہ آئی ایم ایف نے پیٹرولیم مصنوعات کی قیمتیں بڑھانے کا کہا تھا۔ ’لیکن میں آئی ایم ایف کو قصوروار نہیں کہوں گا۔ مجھے دنیا کا کوئی ایسا ملک دکھائیں جو ایک لیٹر پٹرول پر 86 روپے سبسڈی دیتا ہو ۔‘

Views= (488)

گروپ جائن کرنے کے لیے کلک کریں (NewsHook) /#/ (NewsHook-2)

اہم خبریں/ تازہ ترین