گھر میں گھس کر 6 ڈاکوؤں نے 2 خواتین کو ریپ کا نشانہ بنا ڈالا

بورے والا ساہوکا تھانے کی حدود میں ہفتہ کو علی الصبح 6 ڈاکوؤں نے گھر میں ڈکیتی کے دوران دو خواتین کو ریپ کا نشانہ بنا ڈالا۔
رپورٹ کے مطابق واقعہ چک ای بی-303 میں پیش آیا جہاں رات گئے اسلحے سے لیس ڈاکوؤں نے ایک گھر میں گھس کر مردوں کو رسیوں سے باندھ کر دو بھائیوں کی بیویوں کو ان کے کمسن بچوں اور دیگر افراد کے سامنے ریپ کا نشانہ بنایا۔
اس کے بعد وہ 50 ہزار روپے نقدی، طلائی زیورات اور دیگر قیمتی سامان لے کر فرار ہوگئے۔
بورے والا کے ڈی ایس پی مہر وسیم نے ڈان کو بتایا کہ ملزمان کا سراغ لگانے کے لیے تین ٹیمیں تشکیل دی گئی ہیں، انہوں نے کہا کہ ابتدائی میڈیکل رپورٹ میں ریپ کی تصدیق ہوئی ہے۔
دوسری جانب انسپکٹر جنرل پنجاب پولیس فیصل شاہکار نے ملتان کے ریجنل پولیس افسر سے کہا ہے کہ وہ ملزمان کی گرفتاری اور سزا کو یقینی بنائیں۔
انہوں نے کہا کہ خواتین کے خلاف تشدد اور عصمت دری کے مجرم کسی ہمدردی کے مستحق نہیں ہیں اور ان کے خلاف سخت قانونی کارروائی کی جانی چاہیے۔
اس سے قبل مظفرگڑھ کے موضع ٹبی بھٹیاں میں دوران ڈکیتی ڈاکوؤں نے شادی شدہ خاتون کو بچوں کے سامنے مبینہ طور پر گینگ ریپ کا نشانہ بنا ڈالا تھا۔
متاثرہ خاتون کے شوہر طالب حسین نے بتایا کہ 3 ڈاکوؤں نے بچوں کے سامنے میری بیوی کا ریپ کیا، 4 مسلح ڈاکو فش فارم سے ٹرانسفارمر اتارنے آئے تھے مگر ٹرانسفارمر نہ اتار سکے، ایک ڈاکو نے مجھ سمیت 2 افراد کو اسلحے کے زور پر یرغمال بنایا۔
طالب حسین نے مزید بتایا تھا کہ بیوی کو زیادتی کا نشانہ بنانے کے بعد ڈاکو بالیاں اور دیگر سامان بھی اٹھا کر لے گئے۔
اس سے قبل 4 جون کو بھی جہلم کے صدر تھانے کی حدود میں حاملہ خاتون کو 5 افراد نے مبینہ طور پر گینگ ریپ کا نشانہ بنایا تھا۔
میڈیا رپورٹس میں بتایا گیا تھا کہ پنجاب کے شہر جہلم کے علاقے صدر میں ملزمان خاتون کے گھر میں گھسے، خاتون کے شوہر پر تشدد کیا اور اسے رسی سے باندھنے کے بعد خاتون کو گینگ ریپ کا نشانہ بنایا۔
قبل ازیں پتوکی کے علاقے چونیاں بائی پاس کے قریب سڑک پر ڈکیتی کے دوران دو نامعلوم ڈاکوؤں نے کم سن لڑکی کو اس کے والد اور دیگر اہل خانہ کے سامنے گن پوائنٹ پر گینگ ریپ کا نشانہ بنایا تھا۔

Views= (1166)

گروپ جائن کرنے کے لیے کلک کریں (NewsHook) /#/ (NewsHook-2)

اہم خبریں/ تازہ ترین